URDU NEWS

ماربل انڈسٹری پر بہتر توجہ دے کر برآمدات میں نمایاں اضافہ کیا جا سکتا ہے۔ محمد شکیل منیر

میکنائزڈ مائیننگ کو فروغ دینے کیلئے ماربل مشینری کی امپورٹ پر ڈیوٹیز کم کی جائیں: صدر اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری
اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر محمد شکیل منیر نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ماربل انڈسٹری کی بہتر ترقی پر خصوصی توجہ دے کیونکہ یہ شعبہ پاکستان کو پائیدار ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کی عمدہ صلاحیت رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے مختلف علاقوں میں ماربل و گرینائٹ کے وسیع ذخائر موجود ہیں تاہم ان سے بھرپور استفادہ حاصل کرنے کیلئے یہ ضروری ہے کہ حکومت ماربل کی مشینری اور ٹیکنالوجی کی درآمد پر ڈیوٹی کم کرکے تا کہ میکنائزڈ مائننگ کو فروغ دے کر برآمدات میں نمایاں اضافہ کیا جائے۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیمبر کے دورے کے موقع پر دبئی سے آئے ہوئے ماربل سیکٹر کے معروف بزنس مینوں عامر نورانی اور ناصر احمد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔
آل پاکستان ماربل انڈسٹری ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین سلیم مغل بھی اس موقع پر موجود تھے۔محمد شکیل منیر نے کہا کہ چین، اٹلی، ترکی، اسپین اور برازیل سمیت کئی ممالک نے اپنے ماربل ذخائر کو اقتصادی ترقی کے لیے موثر طریقے سے استعمال کیا ہے لیکن پاکستان میں اس شعبے کی برآمدات کیلئے زبردست صلاحیت کے باوجود اس کی بہتر ترقی پر توجہ نہیں دی گئی۔
انہوں نے کہا کہ ماربل کی مصنوعات تیار کرنے کیلئے ابھی تک پرانی ٹیکنالوجی استعمال ہو رہی ہے جس کی وجہ سے بہت سا پتھر ضائع ہو رہا ہے۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ ماربل شعبے میں جدید ترین مشینری متعارف کرانے میں تعاون کرے تاکہ میکنائزڈ مائیننگ کو فروغ دے کر ماربل و گرینائٹ کی ویلیو ایڈڈ مصنوعات تیار کی جا سکیں جس سے برآمدات میں خاطرخواہ اضافہ ہو گا۔
انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ ماربل سیکٹر کے تمام اہم مسائل کو فوری حل کرنے کیلئے اقدامات لئے جائیں تاکہ ملک کی معاشی ترقی کے لیے اس شعبے کی حقیقی صلاحیت کو بروئے کار لایا جا سکے۔ انہوں نے وفد کو یقین دلایا کہ آئی سی سی آئی متحدہ عرب امارات کے لیے پاکستان کی ماربل و گرینائٹ مصنوعات کی درآمدات کو بڑھانے کے لیے ان کے ساتھ مکمل تعاون کرے گا۔
دبئی سے آئے ہوئے ماربل سیکٹر کے معروف بزنس مینوں عامر نورانی اور ناصر احمد نے اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دبئی سمیت متحدہ عرب امارات میں بہت سے تعمیراتی منصوبے جاری ہیں لہذا پاکستان کے لئے یہ اچھا موقع ہے کہ ماربل و گرینائٹ کی ویلیو ایڈیڈ مصنوعات تیار کر کے برآمدات کو بڑھانے کی کوشش کرے۔ آل پاکستان ماربل انڈسٹری ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین سلیم مغل نے کہا کہ انفراسٹرکچر کی ترقی، ٹیکنالوجیکل اپ گریڈیشن، ماربل شعبے کو آسان اور سستے قرضوں کی فراہمی، ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ اور مارکیٹنگ کے لیے حکومت اس شعبے کے ساتھ ہرممکن تعاون کرے تاکہ ماربل سیکٹر بہتر ترقی کر کے معیشت کو مضبوط کرنے میں اپنا فعال کردار ادا کر سکے۔
انہوں نے کہا کہ کانوں تک سڑکوں کی رسائی کا فقدان، سڑکوں کے نیٹ ورک کی کمی، یوٹیلیٹیز اور صنعتی زونز کی کمی اس شعبے میں کم سرمایہ کاری کے اہم عوامل ہیں لہذا حکومت ان مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی کوشش کرے۔