URDU NEWS

سیمنٹ کی فروخت میں 44.39فیصد اضافہ

مارچ 2021کے مہینے میں سیمنٹ کی مقامی فروخت 4.563ملین ٹن رہی
مقامی کھپت اور برآمدات میں اضافہ کے باعث مارچ 2021میں سیمنٹ کی فروخت میں 44.39فیصد اضافہ ہوا جو سیمنٹ انڈسٹری کی تاریخ میں کسی بھی مہینے کی سب سے زیادہ شرح نمو ہے۔ مارچ 2021کے دوران سیمنٹ کی مجموعی فروخت 5.373ملین ٹن رہی جو مارچ 2020میں 3.722ملین ٹن رہی تھی۔ آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے اعدادوشمار کے مطابق مارچ 2021کے مہینے میں سیمنٹ کی مقامی فروخت 4.563ملین ٹن رہی جو مارچ 2020کی 3.214ملین ٹن کی فروخت سے 41.96فیصد کے نمایاں اضافہ کو ظاہر کرتی ہے۔ مارچ 2021میں سیمنٹ کی ایکسپورٹ میں بھی 59.80فیصد کا نمایاں اضافہ ہوا اور مارچ 2021میں سیمنٹ کی ایکسپورٹ 8لاکھ10ہزار962ٹن رہی جبکہ مارچ 2020کے دوران 5لاکھ7ہزار480ٹن سیمنٹ ایکسپورٹ کی گئی تھی۔ مارچ2021کے دوران شمالی ریجن کی سیمنٹ فیکٹریوں کی مقامی فروخت 38.52فیصد اضافہ سے 3.809ملین ٹن رہی جو مارچ 2020 میں 2.749ملین ٹن رہی تھی۔ سدرن ریجن کی فیکٹریوں کی مقامی فروخت 62.28فیصد اضافہ سے 7لاکھ53ہزار 704ٹن رہی جو مارچ 2020میں 4لاکھ64ہزار440ٹن رہی تھی۔ شمالی ریجن کی سیمنٹ فیکٹریوں کی ایکسپورٹ مارچ 2021کے دوران 162.58فیصد کے بھرپور اضافہ سے 2لاکھ80ہزار 330ٹن رہی جو مارچ 2020میں ایک لاکھ6ہزار759ٹن رہی تھی۔ سدرن ریجن کی سیمنٹ فیکٹریوں کی ایکسپورٹ 32.42فیصد اضافہ سے 5لاکھ30ہزار632ٹن رہی جبکہ مارچ 2020کے دوران سدرن ریجن کی فیکٹریوں سے 4لاکھ721ٹن سیمنٹ ایکسپورٹ کی گئی تھی۔رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران سیمنٹ کی مجموعی فروخت (مقامی اور ایکسپورٹ) 16.99فیصد اضافہ سے 43.325ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 37.035ملین ٹن رہی تھی۔ جولائی تا مارچ 2021کے دوران سیمنٹ کی مقامی فروخت 18.29فیصد اضافہ سے 36.182ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں 30.588ملین ٹن رہی تھی۔ رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران سیمنٹ کی ایکسپورٹ 10.80فیصد اضافہ سے 7.144ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں 6.447ملین ٹن رہی تھی۔ رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران شمالی ریجن کی سیمنٹ فیکٹریوں کی مقامی فروخت 17.75فیصد اضافہ سے 30.629ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں 26.012ملین ٹن رہی تھی۔ جولائی تا مارچ 2021کے دوران شمالی ریجن سے سیمنٹ کی ایکسپورٹ 0.22فیصد کمی سے 1.911ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 1.915ملین ٹن رہی تھی۔ رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران سدرن ریجن کی سیمنٹ فیکٹریوں کی مقامی فروخت 21.36فیصد اضافہ سے 5.552ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران 4.575ملین ٹن رہی تھی۔ سدرن ریجن کی فیکٹریوں سے سیمنٹ کی ایکسپورٹ 15.46فیصد اضافہ سے 5.232ملین ٹن رہی جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں 4.531ملین ٹن رہی تھی۔ سیمنٹ کی فروخت میں نمایاں اضافہ اور بلند شرح نمو کے ساتھ بجلی اور کوئلے کی قیمتوں میں اضافہ کی وجہ سے خدشات بھی سر اٹھارہے ہیں۔ سیمنٹ کی پیداوار میں توانائی کا استعمال زیادہ ہونے کی وجہ سے انڈسٹری کے لیے توانائی سمیت دیگر اہم پیداواری اجزاءکی قیمتوں میں اضافہ کا مقابلہ کرنا مشکل تر ہورہا ہے۔ ترجمان آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے مطابق سیمنٹ انڈسٹری کسی قسم کی خصوصی مراعات کا مطالبہ نہیں کرتی بلکہ دیگر پانچ بڑی ایکسپورٹ انڈسٹریز کے برابر کا درجہ چاہتی ہے۔ سیمنٹ انڈسٹری کے مطابق کوئلہ سیمنٹ کی پیداوار کا اہم جز ہے جس کی درآمد پر عائد لیویز کو مناسب سطح تک کم کرکے سیمنٹ انڈسٹری کی مشکلات کو کم کیا جاسکتا ہے۔

Leave a Comment