URDU NEWS

چینی درآمدی منڈی میں صرف ایک فیصد حصہ حاصل کرکے پاکستان کی برآمدات میں 23 ارب ڈالر سالانہ اضافہ کیا جاسکتا ہے،عشرت حسین

چینی درآمدی منڈی میں صرف ایک فیصد حصہ حاصل کرکے پاکستان کی برآمدات میں 23 ارب ڈالر سالانہ اضافہ کیا جاسکتا ہے۔ وزیراعظم کے مشیر برائے ادارہ جاتی اصلاحات و کفایت شعاری عشرت حسین نے کہا ہے کہ قومی برآمدات میں اضافہ کے لئے روایتی برآمدات اور صنعت کی بجائے نئی مصنوعات کی تیاری اور نئی صنعتوں پر توجہ دینے کی ضرورت ہے ورنہ ہماری برآمدات 25 تا 30 ڈالر سالانہ کے درمیان ہی رہیں گی۔انہوں نے کہا کہ چین کی درآمدی منڈی میں صرف ایک فیصد حصہ حاصل کر کے پاکستان چین کو سالانہ 23 ارب ڈالر کی برآمدات کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آزادانہ تجارت کے معاہدہ کے تحت چین نے پاکستان کو درآمدات بڑھانے کا خاطر خواہ موقع فراہم کیا ہے جس سے استفادہ کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان چین کی مارکیٹ سے استفادہ نہیں کر رہ بلکہ ہم یورپی یونین اور امریکا کی منڈیوں پر توجہ دے رہیہیں جن کی شرح نمو یاتو منفی ہے یا ایک تا دو فیصد کے درمیان ترقی کررہی ہے۔دوسری جانب چین اور اشیا کی معیشت سالانہ 5 تا 6 فیصد کی شرح سے ترقی کر رہی ہے اور چین دنیا کاسب سے بڑا برآمد کنندہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں پانچ برآمدی شعبوں کی طرح دیگر صنعتوں کو بھی مراعات دینا ہوں گی تاکہ نئے سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی سے نئی نئی صنعتیں لگیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکنالوجی کے سٹارٹ ایپس اور بالخصوص آئی ٹی کے شعبہ میں ترقی کے وسیع امکانات موجود ہیں۔