URDU NEWS

صوبہ میں1کروڑ62لاکھ ایکڑ رقبہ پر گندم کی کاشت اور 2کروڑ میٹرک ٹن پیداوار حاصل کرنے کیلئے تمام ممکنہ وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں، مومنہ وحید

امسال صوبہ میں1 کروڑ62لاکھ ایکڑ رقبہ پر گندم کی کاشت اور 2کروڑ میٹرک ٹن پیداوار حاصل کرنے کیلئے تمام ممکنہ وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں،چیئر پرسن سٹیڈنگ کمیٹی فار چیف منسٹر انسپیکشن ٹیم مومنہ وحید۔ وزیراعظم پاکستان کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت قومی سطح پر گندم کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کیلئے 12 ارب 54 کروڑ روپے کی رقم مختص کی گئی ہے ۔ صوبہ پنجاب میں موجودہ مالی سال کے دوران 80 کروڑ روپے کی خطیر رقم سے کاشتکاروں کو منظور شدہ اقسام کے بیج اور دیگر زرعی مداخل سبسڈی پر فراہم کیے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی ملکی آبادی کی غذائی ضروریات پوری کرنے کیلئے گندم کی پیداوار میں اضافہ ناگزیر ہے ۔حکومت نے کاشتکاروں کے مالی مفاد کو مد نظررکھتے ہوئے امسال گندم کی امدادی قیمت بڑھاکر1650روپے فی من مقرر کردی ہے ۔مختلف فصلات کی لاگت کاشت میں کمی کیلئے کھادوں پر اربوں روپے کی سبسڈی بھی فراہم کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دھان کے وڈھوں میں گندم کی کاشت کیلئے500 رائس شریڈر اور500 ہیپی سیڈرز کی خرید پر 80فیصد سبسڈی فراہم کی جارہی ہے۔اس مشینری کے استعمال سے نہ صرف ماحولیاتی آلودگی میں کمی ہوگی بلکہ زمین کی زرخیزی میں بھی اضافہ ہوگا۔وزیر ززراعت نے مزید کہا کہ مارکیٹوں میں معیاری زرعی مداخل کی دستیابی یقینی بنانے کیلئے متعلقہ شعبہ جات کو احکامات جاری کردئیے گئے ہیں۔مارکیٹوں کی سخت نگرانی کے نتیجہ میں کھادوں اور زرعی ادویات میں ملاوٹ میں مکروہ دھندھے میں ملوث عناصر کیخلاف سخت قانونی کارروائیاں عمل میں لائی جارہی ہیں۔